Facebook Post

Comments Box SVG iconsUsed for the like, share, comment, and reaction icons
1 day ago
Al-Munib

زاویہ نظر
مفتی اعظم پاکستان مفتی منیب الرحمن
جدید استعاراتی سیاسی لغات
روزنامہ دنیا، 22 جنوری 2022
... See MoreSee Less

زاویہ نظر
مفتی اعظم پاکستان مفتی منیب الرحمن
جدید استعاراتی سیاسی لغات
روزنامہ دنیا، 22 جنوری 2022

Comment on Facebook

بہترین

السلام علیکم اسلوب تحریر، طرز ترتیب؛ اشعار و امثلہ در کمال در کمال۔ مواد توہمیشہ شاندار ہوتا ہے۔ بارک اللہ بركة كثيرة

💯💯💯

💯❤️

السلام علیکم 🌟 ( ناقص مشورہ ) حالات حاضرہ یا مخصوص اسلامی ایام کے متعلق مفتی صاحب کی ہفتہ میں ایک یا دو وڈیو اپلوڈ کی جائیں۔ جمعہ مبارک کو مختص کر لیا جائے۔

درست فرمایا

Aj k column m mufti Sb ne Pakistan k tamam shobay se talluq raakhne walay makrooh chehre ko behad behetreen or ehsan andaaz m be naqab farrmaya h..

کہا بھی کچھ نہیں اور سب کہہ گئے

حق فرمایا آپ نے ❤️👍

View more comments

3 days ago
Al-Munib

زاویہ نظر
مفتی اعظم پاکستان مفتی منیب الرحمن
وقت کی اہمیت
روزنامہ دنیا ، 20 جنوری 2022ء
... See MoreSee Less

زاویہ نظر
مفتی اعظم پاکستان مفتی منیب الرحمن
وقت کی اہمیت
روزنامہ دنیا ، 20 جنوری 2022ء

Comment on Facebook

درست

Zabardast Huzur

🌻🌻🌻🌻🌻🌻🌻🌻🌻 *جمعرات* 20 جنوری 2022 ء 16 جمادی الآخر ١۴۴٣ ھ 🚨آج کراچی میں ختم سحری اور تہجد کا آخری وقت *05:58* ⏲️⏰⌚آج کراچی میں نماز فجر کا آخری وقت *7:17* 🌹🌹🌹🌹🌹🌹🌹🌹🌹 کیا آپ جانتے ہیں کہ 10 دسمبر سے 21 دسمبر تک تہجد اور فجر کا یہ ٹائم ایک ہی رہتا ہے یعنی 5:58 اور 7:17 ہی رہتا ہے 12 دن تک ۔۔۔۔۔۔۔. 🌻💝 جمعرات مرحومین کے لیے اور آج جمعرات ہے ایصال ثواب کا دن ہے ❤️ نذر نیاز کا دن ہے 🌹 درود فاتحہ کا دن ہے 🌻 اللہ عمل کی توفیق دے 💚 والسلام مع الاکرام 😷 🚨

1 week ago
Al-Munib

زاویہ نظر
مفتی اعظم پاکستان مفتی منیب الرحمن
کسی کی جان جائے، آپ کی ادا ٹھیرے
روزنامہ دنیا، 15 جنوری 2022ء
... See MoreSee Less

زاویہ نظر 
مفتی اعظم پاکستان مفتی منیب الرحمن
کسی کی جان جائے، آپ کی ادا ٹھیرے
روزنامہ دنیا، 15 جنوری 2022ء

Comment on Facebook

ماشاء الله تبارك الله.

بہت خوب حرف بحرف درست

Mufti sahab has no competition in writing. No cap💯❤️

Mashallah Allah kreem mufti e azam ko salamat rakhy Ap ne 💯 present haq bat ki hai

A.B. Wahga

جزاك اللّٰه خيرًا

View more comments

1 week ago
Al-Munib

نمازِ جنازہ کی چوتھی تکبیر کے بعد ہاتھ چھوڑکرسلام پھیرنے کا مسئلہ
مفتی اعظم پاکستان مفتی منیب الرحمٰن
13 جنوری2022
... See MoreSee Less

نمازِ جنازہ کی چوتھی تکبیر کے بعد ہاتھ چھوڑکرسلام پھیرنے کا مسئلہ
مفتی اعظم پاکستان مفتی منیب الرحمٰن 
13 جنوری2022

Comment on Facebook

سلامت رہیں ما شاء اللہ

اللہ عزوجل مفتی اعظم حفظہ اللہ کو سلامت رکھے بڑی تفصیل سے اس مسئلے کو واضح کیا ہے

مفتی اعظم پاکستان اللہ پاک آپکوسلامت رکھے

نماز جنازہ میں سلام پھیر کر ہاتھ چھوڑنے کا مسٸلہ سوال: نماز جنازہ کی چوتھی تکبیر کے بعد ہاتھ کب چھوڑنے چاہیے سلام سے پہلے یا سلام کے بعد؟ جواب: پہلی بات تو یہ ہے کہ نماز جنازہ کی چوتھی تکبیر کے بعد ہاتھ چھوڑنے کی تین صورتیں ہو سکتی ہیں۔ سلام سے پہلے،سلام کے ساتھ اور سلام کے بعد۔ان تینوں صورتوں میں جو صورت بھی اختیار کی جاٸے جاٸز ہے اختلاف اَولوِیت میں ہے۔ اس مسٸلہ پر مفتی منیب الرحمن صاحب نے تفصیلی فتویٰ دیا ہے جس میں انہوں نے سلام سے پہلے ہاتھ چھوڑ دینے کے اولیٰ ہونے پر دلاٸل ذکر کیے ہیں اور اس فتویٰ میں مرکزی نقطہ ایک ہی ہے جس پر انہوں نے مختلف فقہإ کی آرا ٕ ذکر کی ہیں۔ اور وہ یہ ہے: "ہاتھ باندھنے کے بارے میں قاعدہ یہ ہے کہ:ہر وہ قیام جس میں کوٸی مسنون ذکر ہو تو اس میں ہاتھوں کو باندھا جاٸے گا اور جہاں کوٸی مسنون ذکر نہ ہو تو ہاتھوں کو باندھا نہیں جاٸے گا۔یہی صحیح مذہب ہے پس حالت قنوت اور جنازہ میں ہاتھوں کو باندھا جاٸے گا،قومہ اور تکبیرات عیدین میں ہاتھوں کو چھوڑا جاٸے گا۔(ہدایہ ج:1 ص:49) یہ قاعدہ ذکر کرنے کے بعد مفتی صاحب تبصرہ کرتے ہوٸے لکھتے ہیں کہ: "اس اصول کی روشنی میں نماز جنازہ میں چوتھی تکبیر کے بعد ہاتھ باندھے رکھنے کا کوٸی سبب نہیں لہذا ہاتھوں کو چھوڑ کر سلام پھیرنا ہماری راٸے میں زیادہ بہتر ہے" مذکورہ راٸے(ہاتھ سلام سے پہلے چھوڑے جاٸیں گے) پر دو اشکال ہیں ١۔پہلا اشکال ذکر کردہ اصول کے متعلق ہے کہ :ہر وہ قیام جس میں کوٸی مسنون ذکر ہو تو اس میں ہاتھوں کو باندھا جاٸے گا اور جہاں کوٸی مسنون ذکر نہ ہو تو ہاتھوں کو باندھا نہیں جاٸے گا کیونکہ اس میں جو مثال ذکر کی گٸی ہے کہ قومہ میں ذکر مسنون نہیں ہے لہذا اس لیے ہاتھ چھوڑ کے کھڑا ہوا جاتا ہے حالانکہ قومہ میں ذکر مسنون روایت سے ثابت ہے اور پر فضیلت بھی ہے۔ اس پر روایات تو متعدد ہیں صرف دو ملاحظہ فرماٸیں۔ عن أبي هُرَيرةَ رضيَ اللهُ عنه، قال:كان رسولُ اللهِ صلَّى اللهُ عليه وسلَّم إذا قام إلى الصَّلاةِ، يكبِّرُ حين يقومُ، ثم يكبِّرُ حين يركَعُ، ثم يقولُ: سمِعَ اللهُ لِمَن حمِدَه، حين يرفَعُ صُلبَه مِن الرَّكعةِ، ثم يقولُ وهو قائمٌ: ربَّنا لك الحمدُ- قال عبدُ اللهِ: ولك الحمدُ ثم يُكبِّرُ حين يَهْوِي، ثم يكبِّرُ حين يرفَعُ رأسَه، ثم يكبِّرُ حين يسجُدُ، ثم يكبِّرُ حين يرفَعُ رأسَه، ثم يفعَلُ ذلك في الصَّلاةِ كلِّها حتَّى يقضيَها، ويُكبِّرُ حين يقومُ مِن الثِّنتَيْنِ بعد الجلوسِ. (بخاری) حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْلَمَةَ ، عَنْ مَالِكٍ ، عَنْ نُعَيْمِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ الْمُجْمِرِ ، عَنْ عَلِيِّ بْنِ يَحْيَى بْنِ خَلَّادٍ الزُّرَقِيِّ ، عَنْ أَبِيهِ ، عَنْ رِفَاعَةَ بْنِ رَافِعٍ الزُّرَقِيِّ ، قَالَ : كُنَّا يَوْمًا نُصَلِّي وَرَاءَ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ ، فَلَمَّا رَفَعَ رَأْسَهُ مِنَ الرَّكْعَةِ ، قَالَ : سَمِعَ اللَّهُ لِمَنْ حَمِدَهُ ، قَالَ رَجُلٌ وَرَاءَهُ : رَبَّنَا وَلَكَ الْحَمْدُ حَمْدًا كَثِيرًا طَيِّبًا مُبَارَكًا فِيهِ ، فَلَمَّا انْصَرَفَ ، قَالَ : مَنِ الْمُتَكَلِّمُ ؟ قَالَ : أَنَا ، قَالَ : رَأَيْتُ بِضْعَةً وَثَلَاثِينَ مَلَكًا يَبْتَدِرُونَهَا أَيُّهُمْ يَكْتُبُهَا أَوَّلُ۔(بخاری) ٢۔ دوسری بات یہ کہ نماز جنازہ کو اگر نماز (پنجگانہ )پر قیاس کیا جاٸے تو سلام کے بعد ہاتھ چھوڑنا زیادہ بہتر ہے کیونکہ نماز میں جب سلام پھیرا جاتا ہے تو سلام پھیرنے کے بعد نماز کی ہیٸت سے باہر آیا جاتا ہے اسی طرح نماز جنازہ کی ہیٸت ہاتھ باندھ کر کھڑے ونا ہے تو وہاں پر بھی سلام کے بعد ہی ہاتھ چھوڑنا زیادہ مناسب لگتا ہے۔ ٣۔اور ذکر کردہ اصول کو دیکھا جاٸے تو سلام بھی ذکر مسنون میں شامل ہے تو اس ذکر کے وقت بھی بندھے ہونے چاہیے۔ واللہ اعلم بالصواب از قلم: محمد اسداللہ

Mashallah jazakallah

مفتی اعظم پاکستان اللہ پاک آپ کو سلامت رکھے بہت خوبصورت جواب

زبردست مفتی اعظم پاکستان

Muhammad Ishaq Alam

اس کار خیر کو تسلسل کی لڑی سے پروئیں تو نوازش ۔۔۔

Sheraz Yaseen

یہ بہت اچھا کام ہے مسلسل ہو تو کیا کہنے

View more comments

Load more